Top 10 similar words or synonyms for مثبرقیہ

electron    0.854471

تعدیلہ    0.846292

acid    0.840911

emission    0.838640

electromagnetic    0.831603

meter    0.829450

radioactivity    0.827845

plasma    0.827392

محرکیہ    0.827335

particle    0.826206

Top 30 analogous words or synonyms for مثبرقیہ

Article Example
مثبت برقيہ سب سے پہلے تجربات کے دوران 1930 میں مثبرقیہ کا مشاہدہ کرنے والے عالم کا نام چنگ یاؤ چاؤ (Chung Yao Chao) تھا جس سے برقیہ – مثبرقیہ فناء کے دوران اسکی موجودگی کو دیکھا مگر وہ اس وقت مثبرقیہ کے ایک علاحدہ سے ذراتی حیثیت کا ادراک نہ کرسکا تھا۔ مثبرقات کو ایک قسم کے تابکاری تنزل ، مثبرقیہ اصدار یا positron emission کے دوران پیدا کیا جاسکتا ہے جو ایک نحیف تفاعل یا weak interaction ہے۔
مثبت برقيہ آج کل عام زندگی میں مثبرقیہ کا استعمال شائد سب سے زیادہ شفاخانوں میں ایک تشخیصی آلے میں ہوتا ہے جس سے انسانی جسم کی تصاویر کی طرح اتاری جاسکتی ہیں (جیسا کہ MRI یا ایکس شعاع کے ذریعے بھی کیا جاتا ہے) اور اس اختبار کو مثبرقیہ اصداری قطع تصویر یا positron emission tomography کہتے ہیں اور اسے PET کے اختصار سے ظاہر کیا جاتا ہے۔ اسکے علاوہ طبیعیات کی تجربہ گاہوں میں برقیہ – مثبرقیہ تصادم یعنی electron-positron collider کے تجرباتی کے آلات میں بھی اسے استعمال کیا جاتا ہے۔
برقیہ برقیہ کا ضد ذرہ یا Antiparticle ، مثبرقیہ یعنی Positron کہلاتا ہے۔ مثبرقیہ پر بھی اتنا ہی برقی بار ہوتا ہے جتنا کہ برقیہ پر مگر اس بار کی نوعیت مخالف ہوتی ہے یعنی یہ مثبت ہوتا ہے۔ مثبرقیہ کے دریافت کنندہ Carl D. Anderson نے یہ تجویز بھی پیش کی تھی کہ ایک عام برقیہ (Electron) کا نام بدل کر Negatron کر دیا جاۓ اور Electron کی اصطلاح کو مشترکہ طور پر Electron اور Positron دونوں کے لیے استعمال کیا جاۓ مگر اس کی اس تجویز کو خاص پذیرائی نہیں ملی۔
مثبت برقيہ مثبت برقيہ (posit-ron) دراصل ایک برقیہ یا electron کا ضد ذرہ یا antiparticle ہے اور اسی وجہ سے اسکا شمار ضد مادہ یا antimatter میں کیا جاتا ہے۔ ایک مثبرقیہ پر برقی بار +1 ہوتا ہے اور اسکی غزل 1/2 تسلیم کی جاتی ہے جبکہ اسکی کمیت وہی ہوتی ہے جو ایک برقیہ کی ہوا کرتی ہے۔ جب ایک کم توانائی والا مثبرقیہ جب ایک کم توانائی والے برقیہ کے ساتھ تصادم کرتا ہے تو فناء یا annihilation واقع ہوجاتی ہے اور اس کے نتیجے میں گاما شعاعوں کے دو نورات یا photons خارج ہوتے ہیں (اسکی مزید تفصیل کے ليے برقیہ – مثبرقیہ فناء دیکھیے)
کارل ڈیوڈ انڈریسن کارل ڈیوڈ انڈریسن امریکہ کےکے ایک طبیعیات دان تھے جنھیں مثبرقیہ کو دریافت کرنے پر 1936ء میں نوبل انعام برائے طبیعیات دیا گیا ۔
مثبت برقيہ مثبرقیہ کے وجود کے بارے میں پیشگوئی یا اسکا تفکر سب سے پہلے Paul Dirac نے 1928 میں ڈیراک مساوات کے منطقی نتیجے سے حاصل ہونے والی معلومات کی بنیاد پر کیا اور پھر 1932 میں Carl David Anderson نے اس مفروضہ ذرے کو دریافت کیا اور اسی نے اسے positron (مثبرقیہ) کا نام بھی دیا۔ یہ ضد مادہ کی پہلی شہادت تھی جو سامنے آئی۔
بیٹا تنزل علم مرکزی طبیعیات میں بیٹا تنزل سے مراد ایک ایسے اشعاعی تنزل (Radioactive Decay) کی ہوتی ہے کہ جس میں کسی اشعاعی مرکیزہ (Radionuclide) سے ایسے ذرات (Particles) خارج ہوتے ہیں کہ جن کو بیٹا ذرات کہا جاتا ہے، یہ بیٹا ذرات (Beta Particles) اپنی حقیقت میں یا تو برقیہ (Electron) ہوسکتے ہیں اور یا پھر مثبرقیہ (Positron) ہوسکتے ہیں۔