Top 10 similar words or synonyms for فیاضی

دلیری    0.719113

عزت    0.715332

ہوشیاری    0.708834

لگن    0.698222

حرص    0.688812

خلوص    0.684150

عفت    0.675900

جلالت    0.672662

عاجزی    0.667806

عقیدت    0.664948

Top 30 analogous words or synonyms for فیاضی

Article Example
سر سید احمد خان ”تیرے ہی سبب سے ہمارے خوابیدہ خیال جاگتے ہیں ۔ تیری ہی برکت سے خوشی ،خوشی کے لئے۔ نام آوری ، نام آوری کے لئے ، بہادری ،بہادری کے لئے، فیاضی ، فیاضی کے لئے، محبت ، محبت کے لئے ، نیکی ، نیکی کے لئے تیار ہے۔ انسان کی تمام خوبیاں اور ساری نیکیاں تیری ہی تابع اور تیری ہی فرمانبردار ہیں۔“
زینب بنت خزیمہ آپ کے والد کا نام خزیمہ تھا۔ ام المساکین کنیت تھی۔ فقراء اور مساکین کے ساتھ فیاضی کرتی تھیں۔ اس لیے اس کنیت سے مشہور ہوگئیں۔
اسلام کا فلسفہ معیشت اس لیے وہ مشقت کے مواقع پر مامورات میں بہت فیاضی سے ممنوعات کی اجازت دینے میں سختی نہیں برتتی۔ سفر اور مرض کی حالتوں میں نماز، روزے اور دوسرے واجبات کے معاملہ میں جتنی تخفیفیں کی گئی ہیں، اتنی تخفیفیں ناپاک اور حرام چیزوں کے استعمال کے لئے نہیں کی گئی ہیں۔
تیسری صلیبی جنگ اس صلیبی جنگ میں سوائے عکہ شہر کے عیسائیوں کو کچھ بھی حاصل نہ ہوا اور وہ ناکام واپس ہوئے۔ رچرڈ شیر دل ، سلطان کی فیاضی اور بہادری سے بہت متاثر ہوا جرمنی کا بادشاہ بھاگتے ہوئے دریا میں ڈوب کر مرگیا اور تقریباً 6 لاکھ عیسائی ان جنگوں میں ‌کام آئے۔
صلاح الدین ایوبی اس صلیبی جنگ میں سوائے عکہ شہر کے عیسائیوں کو کچھ بھی حاصل نہ ہوا اور وہ ناکام واپس ہوئے۔ رچرڈ شیردل ، سلطان کی فیاضی اور بہادری سے بہت متاثر ہوا جرمنی کا بادشاہ بھاگتے ہوئے دریا میں ڈوب کر مرگیا اور تقریباً چھ لاکھ عیسائی ان جنگوں میں‌کام آئے۔
مامون الرشید تمام خلفائے بنی العباس میں کوئی تخت نشین دانائی ، عزم ، بردباری ، علم ، رائے ، تدبیر ، ہیبت ، شجاعت ، عالی حوصلگی ، فیاضی میں اسے سے افضل نہیں گزرا۔ مامون کا ادعا کچھ بے جا نہ تھا کہ معاویہ کو عمر بن العاص کا بل تھا ، عبدالملک کو حجاج کا اور مجھ کو اپنا۔
صلیبی جنگیں اس صلیبی جنگ میں سوائے عکہ شہر کے عیسائیوں کو کچھ بھی حاصل نہ ہوا اور وہ ناکام واپس ہوئے۔ رچرڈ شیر دل ، سلطان کی فیاضی اور بہادری سے بہت متاثر ہوا جرمنی کا بادشاہ بھاگتے ہوئے دریا میں ڈوب کر مرگیا اور تقریباً چھ لاکھ عیسائی ان جنگوں میں کام آئے۔
امہات المؤمنین ام المساکین کے والد کا نام خزیمہ تھا۔ ام المساکین کنیت تھی۔ فقراء اور مساکین کے ساتھ فیاضی کرتی تھیں۔ اس لیے اس کنیت سے مشہور ہوگئیں۔ پہلے شوہر عبد اللہ بن جحش تھے جو غزوۂ احد میں شہید ہوئے تو آنحضرت صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم سے نکاح ہوا لیکن صرف دو تین ماہ کے بعد ہی انتقال کیا۔
زمانہ جاہلیت اہل عرب بالعموم اور قریش بالخصوص تجارت پیشہ تھے۔ صنعت و حرفت میں پسماندہ تھے۔ صرف یمن میں اون کاتنے اور چادر اور کمبل بنانے کی صنعت موجود تھی یا بعض جگہوں پر جنگی ہتھیار بنانے کا رواج تھا۔ یہ لوگ اپنے قومی اخلاق ، مہمان نوازی ، ایفائے عہد ، بہادری اور فیاضی کے ساتھ بعض برائیوں میں بھی مبتلا تھے۔ مثلاً شراب خوری ، قمار بازی ، دختر کشی اور معمولی جھگڑے پر مسلسل لڑائی جیسی عادات موجود تھیں۔
سودہ بنت زمعہ اور سخاوت و فیاضی ان کے اوصاف کے نمایاں پہلو تھے۔ حضرت محمد کے وصال کے بعد ان کو وظیفہ ملا کرتا تھا جو وہ صدقہ کر دیا کرتی تھیں۔ خلافت امویہ کے پہلے خلیفہ معاویہ بن ابو سفیان نے ان کا مدینہ منورہ میں مکان 180،000 درہم میں خریدا۔ حضرت سودہ اکتوبر 674ء میں حضرت عمر فاروق رضی اللہ عنہ کے زمانۂ خلافت میں انتقال فرما گئیں۔