Top 10 similar words or synonyms for سٹراپیوں

مہینے    0.578286

صدیاں    0.573874

سیپارے    0.570290

آیتوں    0.569687

ساڑھے    0.566251

سرسٹھ    0.565403

اعشاریہ    0.562513

انیاسی    0.551146

رکوع    0.540476

رکعت    0.540355

Top 30 analogous words or synonyms for سٹراپیوں

Article Example
ہخامنشی سلطنت سٹراپی جو ہخامنشی دور میں خشتران پوان Khshtr Pawan کہلاتا تھا۔ اس کی تقریری براہ راست بادشاہ کے ہاتھ میں تھی۔ وہ اپنے حلقہ میں آزادنہ حکومت کرتا تھا اور صرف بادشاہ کو جواب دہ تھا۔ دارا اول کے کتبے میں اٹھائیس سٹراپیوں میں بٹی تھی۔ خشیار شا اول کے کتبے سے تیس سٹراپیوں کے حالات کا پتہ چلتا ہے۔
دارا اول فتوحات اور زرمیہ واردات ہی دارا کے کارنامے نہیں ہے۔ انتظان مملکت قانون سازی اور تعمیرات کے سلسلے میں اس کی کارٖگزاریاں قابل ستائش ہیں۔ اس نے اپنی مملکت کو بیس تا اٹھائیس صوبوں یا سٹراپیوں میں میں تقسیم کیا اور ہر ایک پر ایک حاکم (خشتریوان) مقرر کیا اور ناجائز محاصل یک قلم منسوخ کردیئے۔ نیز مقدامت فیصل کرنے کے لیے عدالتیں قائم کیں۔ ایران کی تاریخ میں پہلا بادشاہ ہے جس نے سونے اور چاندی کے سکے جاری کئے، جن کو ’دریک Daric‘ کہتے تھے۔
دارا اول دارا نے دارلحکومت پرساگر یا پسر گدائی کے جنوب و مغرب میں تقریباً پچیس میل کے فاصلے پر ایک نیا شہر آباد کیا اور وہاں ایک محل تعمیر کرایا جو ظخر Tachara کے نام سے مشہور تھا۔ اسی طخر کی طرف منسوب ہوکر پورے شہر کا نام اصظخر Istakhr پر گیا جس کو یونانی زبان میں پرسی پولس Persepois اور پارسی تخت جمشید کہتے ہیں۔ دارا نے اسی نو آباد شہر کو اپنا دارلحکومت بنایا اور اس کو ہر لحاظ ترقی دینے کی کوشش کی۔ یہ شہر تین مظبوط فصیلوں سے گھرا ہوا تھا، جن میں ایک فصیل مینارو اور ستونوں کی قطاروں پر مشتمل تھی اور پہاڑوں کی چوٹیوں پر سے گزرتی تھی۔ خاص عمارتیں ایک مستطیل نما نا ہموار قطہ پر واقع تھیں۔ ان کے بیچ میں وہ شاہی قیصر تھا جو طخر کے نام سے مشہور تھا۔ اس محل کے درمیان پچاس فٹ مربع کا ایک وسیع کمرہ تھا، جس کی دیواروں پر برجستہ کاری کے نمونے تھے اور تواتر کے ساتھ یہ الفاظ لکھے ہیں جو آج بھی موجود ہیں۔ ’میں دارا بڑا بادشاہ، بادشاہوں کا بادشاہ، ملکوں کا بادشاہ، جس نے یہ محل تعمیر کرایا ہے‘۔ اس کے علاوہ ایک دوسرا بہت بڑا کمرہ تھا جس معتدد دروازے تھے اور عمارت کے مختلف حصوں کی طرف کھلتے ہیں۔ اس قیصر سے متصل ایک دوسری عمارت ہے جس کو آج کل ٹرپی لون Trrpylon کہتے ہیں۔ شاید یہ شاہی ایوان تھا۔ اس کے زینہ دار راستوں کی رویف پر امراء کی شکلیں کھدی ہوئی ہیں جن کو اوپر جاتے ہوئے دیکھایا گیا ہے۔ مشرقی پھاٹک کے سامنے دارا کا مجسمہ کندہ ہے جو تخت پر بیٹھا ہوا ہے اس کے پیچھے ایک شخص کھڑا ہوا ہے جو شاید اس کا ولی عہد خشیار شاہ ہے۔ اس عمارت کے نمونوں میں اٹھائیس شکلیں ملتی ہیں جو اس کی اٹھائیس سٹراپیوں کی نمائندگی کرتی ہیں۔