Top 10 similar words or synonyms for ستیاگرا

bagalkot    0.820729

وسندھرا    0.810368

difficult    0.808109

پروجیٹ    0.807999

پاکھی    0.805714

olomouc    0.805115

پیوبلا    0.804456

whitley    0.802255

ehsas    0.801890

شیرمین    0.801518

Top 30 analogous words or synonyms for ستیاگرا

Article Example
ستیاگرا ستیاگرا (معنی: ستیا:سچ:گرا:اڑنا) ایک مہم کا نام ہے جسے کانگریسی رہنما گاندھی جی نے شروع کیا تھا اس مہم میں گاندھی کے فلسفہ عدم تشدد اور عوامی مزاحمت دونوں شامل ہیں۔اس اصلاح کے موجد بھی گاندھی تھے۔گاندھی نے برصغیر کی آذادی کی مہم اور جنوبی افریقا میں ہندوستانیوں کو حقوق دلانے کے لئے اس کا سہارا لیا۔یہ فلسفہ نیلسن منڈیلا ،مارٹن لوتھر اور کئی سماجی کارکنوں کو متاثر کر گیا۔اس فلسفے پر عمل پیرا لوگوں کو ستیاگراہی کہتے ہیں۔
تحریک عدم تعاون تحریک عدم تعاون (The Non-cooperation movement ہندی : (असहयोग आन्दोलन : ستمبر 1920ء تا فروری 1922ء) تحریک آزادی ہند کی پہلی کڑی مانی جاتی ہے جسے گاندھی جی نے اپنے ستیاگرا کے طرز پر شروع کیا۔ اس تحریک سے ہندوستانی سیاسیات میں گاندھی دور کا آغاز ہوتا ہے۔ اس کی سربراہی انڈین نیشنل کانگریس نے کی۔
1928ء جنوبی بھارتی ریلوے ہڑتال یہ ہڑتال 20 جولائی سے پرتشدد رخ اختیار کرگئی اور ٹیوٹی کارن، ویلوپورم، مایاورم اور تریچنوپولی میں پرتشدد واقعات پیش آئے۔ ٹیوٹی کارن اور مایاورم ملازموں اور پولیس کے بیچ تصادم کے واقعات رونما ہوئے جن میں ایک ہڑتالی پولیس کی گولی باری میں مارا گیا اور 63 گرفتار ہوئے۔ اسی طرح سے پنروتی، ویکراونڈی اور ویلوکپم میں 78 گرفتاریاں ہوئ۔ ویلوپورم کے ملازمین نے ایک ستیاگرا کا اہتمام کیا تاکہ ان کے مطالبوں پر زور دیا جاسکے۔ تریچنوپولی میں ایک ہلکا انجن ایک بس سے ٹکراگیا جس سے بھاری تعداد متاثر ہوئی۔ مقامی مجمع ہلکے انجن کے چلانے والے کو یورپی پاکر اسے جنونی انداز میں قتل کردیا۔
محمد علی جناح 1919ء کے دوران میں برطانیوں اور ہندوستانیوں کے مابین تعلقات کشیدہ ہوئے جب انہوں نے جنگ کے دوران میں عوامی آزادیوں پر کئی طرح کی پابندیاں عائد کی۔جناح نے اس دور میں استعفی دیا ۔ جلیانوالہ باغ امرتسر کے واقعہ کے بعد سارے ہندوستان میں بے چینی پھیلی جس میں برطانوی فوجیوں نے ہجوم پر فائرنگ کرکے کئی سو لوگوں کا قتل کیا تھا۔ جلیانوالہ باغ سانحے کے تناظر میں گاندھی کی ہندوستان واپسی ہوئی اور انھیں ہندوستان میں گرم جوشی سے خوش آمدید کہا گیا اس دور میں وہ کانگریس کے ایک پر اثر اور قابل احترام رہنما ثابت ہوئے اور اسی دور میں انہوں نے برطانیوں کے خلاف ستیاگرا کی مہم چلائی وہ کئی مسلمانوں کے سامنے بھی متاثرکن شخصیت رکھتے تھے۔ جس کی وجہ تحریک خلافت میں گاندھی کی جانب سے مسلمانوں کے موقف کی حمایت تھی یہ مسلمان خلافت عثمانیہ سے روحانی طور پر منسلک تھے۔لیکن پہلی جنگ عظیم میں عثمانی خلیفہ کو شکست کیوجہ سے اپنے تخت سے محروم ہونا پڑا۔ اس کے بعد اس مہم سے منسلک کئی مسلمان قتل یا قید کئے گئے اور ان مسلمانوں کی حمایت کی وجہ سے گاندھی نے مسمانوں میں اچھی خاصی شہرت کمائی۔ جناح کے برعکس گاندھی اور آل انڈیا کانگریس کے اکثر رہنما ہندوستانی لباس پہننا فخر سمجھتے تھے اور یہ لوگ ہندوستانی زبان کو انگریزی پر فوقیت دیتے تھے۔گاندھی کے مقامی انداز میں کی گئی سیاست نے برصغیر میں کافی شہرت حاصل کی۔ جناح نے گاندھی کے خلافت کے معاملے کو غلط سمجھتے تھے وہ اسے "مذہبی جذبات کا بے جا اظہار " کہتے۔ جناح نے گاندھی کے ستیاگرا مہم کو "سیاسی انارکی" سے تشبیہ دی وہ اس بات پر یقین رکھتے تھے کہ خودمختار حکومت کا حصول قانونی طریقوں سے حاصل کیا جاسکتا ہے۔انہوں نے گاندھی کی مخالفت کی، لیکن ہندوستانیوں کے نظریات کی موجیں انکے مخالف رہی۔ 1920ء میں ناگپور میں ہونے والے کانگریس کے سالانہ اجلاس میں کئی رہنماوں نے جناح کے نظریات کی سخت مخالفت کی وہ اس بات پر مصّر تھے کہ گاندھی کی ستیاگرا مہم کو ہندوستان کی آزادی تک چلایا جانا چاہئے۔ جناح نے اسی عرصے میں ہونے والے مسلم لیگ کے اجلاس میں شرکت نہی کی یہ اجلاس بھی اسی شہر میں منعقد ہوئی تھی اور انہوں نے بھی اسی قسم کی قرارداد منظور کی۔ کانگریس کی جانب سے گاندھی کی مسلسل حمایت کی وجہ سے انہوں نے اس جماعت کے تمام عہدوں سے استعفاء دے دیا، لیکن وہ مسلم لیگ کے عہدوں پر فائز رہے۔
محمد علی جناح کرپس مشن کے ناکام ہونے پر کانگریس نے اگست 1942ء کو کوائٹ انڈیا مہم چلائی اور آزادی تک ستیاگرا کی مہم دوبارہ چلانے کا فیصلہ کیا۔ برطانیہ نے بدلے میں جنگ کے خاتمے تک تمام کانگریسی رہنماوں کو قید کئے رکھا۔ گاندھی کو گوروں نے آغا خان کے ایک محل سے گرفتار کیا اور انہیں گھر میں نظر بند رکھاگیا لیکن انکی طبیعت کی ناسازی کےسبب انہیں 1944ء میں رہا کردیا گیا۔ کانگریس کے رہنماوں کی سیاسی منظرنامے سے گمشدگی کے دوران میں جناح نے تحریک پاکستان خوب چلائی ۔ جناح نے اس دوران میں صوبوں میں بھی لیگ کو سیاسی طور پر مضبوط کیا۔ انہوں نے دلی سے 1940ء میں انگریزی اخبار ڈان کا اجراء کیا جس میں وہ لیگ کے پیغامات کو پھیلاتے اور بعد میں یہ پاکستان کے بڑے انگریزی اخبارات میں شامل ہوئی۔
محمد علی جناح کراچی کے پیدائشی اور لنکن ان سے بیرسٹری کی تربیت حاصل کرنے والے جناح، بیسویں صدی کے ابتدائی دو عشروں میں آل انڈیا کانگریس کے اہم رہنما کے طور پر ابھرے۔ اپنی سیاست کے ابتدائی ادوار میں انہوں نے ہندو مسلم اتحاد کے لئے کام کیا۔ 1916ء میں آل انڈیا مسلم لیگ اور آل انڈیا کانگریس کے مابین ہونے والے میثاق لکھنؤ کو مرتب کرنے میں بھی انہوں نے اہم کردار ادا کیا۔ جناح آل انڈیا ہوم رول لیگ کے اہم رہنماوں میں سے تھے، انہوں نے چودہ نکات بھی پیش کیے، جن کا مقصد ہندوستان کے مسلمانوں کے سیاسی حقوق کا تحفظ کرنا تھا۔ بہر کیف جناح 1920ء میں آل انڈیا کانگریس سے مستعفی ہوگئے، جس کی وجہ آل انڈیا کانگریس کے موہن داس گاندھی کی قیادت میں ستیاگرا کی مہم چلانے کا فیصلہ تھا۔