Top 10 similar words or synonyms for ردی

papyrus    0.682499

شنعار    0.667883

الربیع    0.666891

amphibious    0.665126

metastasis    0.656474

أسد    0.656116

ویلنگ    0.655920

طل    0.655174

سیگور    0.654651

الحلوانی    0.653994

Top 30 analogous words or synonyms for ردی

Article Example
کباڑ بازار ردی پیپر والا کباڑی کی دکان کی اصطلاح گو عام طور پر محض کاغذ کی بنی ہوئی افادات مستعملہ تک محدود معلوم ہوتی ہے لیکن ایسا نہیں اور مذکورہ بالا بیان کے مطابق عام طور پر ردی پیپر کا کام کرنے والے کباڑی حضرات اس کام کو ٹین ڈبے اور بھوسی ٹکڑے کے کام کے ساتھ ساتھ کرتے ہیں۔ بعض اوقات دیکھنے میں آیا ہے کہ اگر کباڑی کو ردی پیپر میں نسبتاً اچھی حالت میں موجود کتب، جرائد و رسائل ہاتھ لگ جائیں تو وہ ان کو تول کر بیچنے کے بجائے، ان کو ید ثانویہ کتابوں کے طور پر قیمت معین کر کہ بھی فروخت کرتے ہیں۔
ٹھوس کچرے کا نظم کچرے کو مختلف شعبوں یا جمع کرنے کے علاقوں کے حساب سے الک کیا جا سکتا ہے۔ کچرے میں ردی، پلاسٹک، لکڑی، اون، ربر اور بجلی کے تار ہو سکتے ہیں۔
پھٹیچر پھٹیچر کے معنی گھٹیا، ردی، پست، کم درجہ، اور کم مرتبہ ہیں۔ ایک معتبر آن لائن ہندی لغتی نوعیت کی ویب سائٹ کی رو سے اس کے معنے وہ شخص ہے جو پھٹے پرانے کپڑے پہنا ہو یا جو گرا ہوا اور بے حیا ہو۔
کاغذی کرنسی 8 نومبر 2016 کو نریندر مودی کے بھارت میں 500 اور 1000 کے نوٹوں کے اسقاط زر کے اعلان سے ہندوستان میں زیر گردش 86 فیصد کرنسی محض چند گھنٹوں میں کاغذی ردی میں تبدیل ہو گئی تھی۔ اگر ہندوستان کی کرنسی ماضی کی طرح سونے چاندی کے سکوں پر مشتمل ہوتی تو عوام اپنی ہی حکومت کے ہاتھوں یوں ذلیل و خوار نہ ہوتے۔ دیکھیے کیش کے خلاف جنگ
انڈیا آفس ریکارڈز ایسٹ انڈیا کمپنی کے ختم ہونے تک روز بروز بڑھتی ہوئی ان دستاویزات کو لندن بھیجا جاتا رہا جہاں انھیں محفوظ کر لیا جاتا۔ جب حکومت کی باگ ڈور انڈیا آفس کے پاس آئی تو ایسٹ انڈیا کمپنی کے فراہم کردہ دستاویزات پر نظر ثانی کے لیے ایک کمیٹی تشکیل دی گئی۔ اس کمیٹی کی دیگر سفارشات میں یہ سفارش بھی شامل تھی کہ تین سو ٹن سے زائد دستاویزات کو ردی میں بیچ دیا جائے۔ دستاویزات کے ضمن میں بلا شبہ یہ ایک عظیم نقصان تھا، تاہم ایسی شہادت ملتی ہے کہ ان ضائع شدہ دستاویزات کی نقول موجود تھیں یا ان میں متعلقہ مواد بہت کم تھا۔
پرویز ہودبھائی پرویز ہودبھائی نے ہایئر ایجوکیشن کمیشن کی اس حکمت ِ عملی پر کڑی تنقید کی کہ ایچ ای سی کا مقصد "کوالٹی کی بجائے بڑی تعداد بنانا ہے"۔ ان کا ماننا تھا کہ اس قسم کی پالیسیاں جن کے ذریعے ریسرچ پیپرز کے مصنفین اور پی ایچ ڈی سپروائزرز کو کیش اور پروموشن کے ثمر عطا ہوتے ہیں،  درحقیقت پاکستانی یونیورسٹیوں  کو اصل معلوماتی اور فائدہ مند ریسرچ پیپرز کی فراہمی کی بجائے ردی پیپرز اور بے کار پی ایچ ڈی  پیدا کرنے کی فیکٹریاں بن گئی ہیں۔ 2003ء سے ہی جب ایچ ای سی ڈاکٹر عطاء الرحمن کے سربراہی میں چل رہی تھی، پرویز ہودبھائی نے اسے آڑے ہاتھوں لیا اور اس پر تنقید کے سلسلے میں   پاکستانی نیوز میڈیا پر بھی مختلف  گرما گرم مباحثےشروع ہوگئے۔
کارل مارکس مارکس نے ہندو ستا ن میں بر طانو ی نو آبادیاتی پالیسی پر نہایت ناراض کااظہارکیا اور ااس پر لعن طعن کی کیونکہ اس پالیسی کی طفیل آبادی کاایک جم غفیرافلاس اور بھوک کا شکار ہو گیاتھا۔1857 میںجب ہندوستان میں برطانو ی نو آباد کارو ں کے خلاف ایک قو می آ ز ادی کی بغاوت پھو ٹ پڑ ی تو مارکس نے دبے ہو ئے لو گو ں کے بچاؤ کے لئے آؤ از اُ ٹھا ئی ۔بر طا نو ی نو آباد یاتی پالیسی کاتجزیہ کر نے کے بعد وہ اس نتیجے پر پہنچا کہ ہند و ستا ن کے لوگ اس وقت تک اپنی غر بت اورافلاس پر قا بو پانے کے قا بل نہیں ہو ں گے جب تک برطانیہ میں پرولتا ریہ کی حکومت نہیں آجاتی،یا ایسا وقت نہیں آجا تا کہ وہ بذات خو د طاقت اکٹھی کر لیں اور نو آباد یاتی جو أہمیشہ کے لئے ا تا ر پھینکیں۔مارکس نے اینگلوچائنی جنگو ں اور چینی پیر و کا رو ں کی بغاو ت پرجو مضامین لکھے ۔وہ اپنے وطن کی آزادی کے لئے لڑنے والے ان عو ام الناس کے لئے ہمد ردی سے پرہیں ۔
نجکاری دنیا بھر میں سماجی تحریکیں نج کاری کے خلاف جڑ پکڑ رہی ہیں۔ سامراجی ایجینڈے پر جس طرح زور دیا جارہا ہے اور جس طرح (IFIS) عالمی مالیاتی پالیسیاں بنا رہی ہیں ان کے خلاف بنگلور ہندوستان میں کسانوں کی بڑی تعداد نے کرناٹکا پاورٹرانسمیشن پر دھاوابول دیا۔ اس طرح بجلی کی کمپنیوں کی نج کاری کے خلاف بھی احتجاج کیا ہے۔ سول سوسائٹی گروپس ارجنٹائنا سے تھائی لینڈگیٹ معا ہدوں کے خلا ف مزاحمت کررہے ہیں۔ انہیں ردی کی ٹوکری میں پھینکنے کے نعرے بلند کررہے ہیں۔ پیرس کے محنت کش ملازمتوں سے بے دخلی اور اجرتوں کی کمی کے خلاف مظاہرے کررہے ہیں۔ 50 ممالک کی 347سول سوسائٹیز جکارتا اعلان کی حمایت کررہی ہیں جس میں عالمی مالیاتی اداروں کی پالیسیوں کے خلاف مزاحمت کا ذکر ہے۔ ترکی کے ڈیمLLISU کے خلاف مظاہرے کئے جارہے ہیں۔ اس ڈیم کے بننے سے 78ہزار کرد افراد بے گھر ہوجائیں گے۔ کارپوریٹ کیپیٹلزم کے خلاف دنیا بھر میں مضامین لکھے جارہے ہیں۔ ادھر پاکستان میں نج کاری کی وجہ سے چھ لاکھ محنت کشوں کو بے روزگار کر دیا گیا ہے۔