Top 10 similar words or synonyms for آدرش

مندرا    0.747254

پاؤلی    0.746416

نمیتا    0.744086

زنتا    0.742906

نعیمہ    0.742776

برندا    0.734731

گایکواڈ    0.734062

نایڈو    0.733762

وجیکمار    0.733167

khanna    0.732671

Top 30 analogous words or synonyms for آدرش

Article Example
آدرش اس اصطلاح کے عام معنی ہیں ﴿وہ چیز جس کا تعلق خیالات سے ہے﴾ فلسفے میں آدرش سے مراد وہ بلند ترین خیال یا اعلی مقصد ہے جو انسانوں کے عمل، خیالات، خواہشات اور کردار کا نصب العین یا آخری منزل ہے۔ افلاطون نے برکلے تک تمام مثالی فلاسفہ نے انسان کے تین آدرش بتائے ہیں:
آدرش صداقت ، حسن، نیکی۔ ان کو اقدار حیات بھی کہتے ہیں۔
جگن ناتھ آزاد جولائی 1948ء میں آزاد کی دوسری شادی وملا نامی خاتون سے ہوئی۔ اس بیاہ سے تین بچے مولود ہوئے۔ سب سے بڑا بیٹا آدرش، چھوٹا بیٹا چندر کانت اور سب سے چھوٹی بیٹی پونم تھی۔
عبید اللہ بیگ عبید اللہ بیگ کی تین صاحبزادیاں ہیں۔ ان کی سب سے بڑی صاحبزادی مریم بیگ ہیں جو ریاست ہائے متحدہ امریکہ میں رہائش پزیر ہیں۔ وہ بھی فنون لطیفہ کے شعبہ سے منسلک ہیں اور تھیٹر اداکارہ ہیں۔ اپنے والد کے نقش قدم پر چلتے ہوئے وہ بھی تعلیم اور فنون لطیفہ میں اپنا کردار ادا کر رہی ہیں۔ عبید اللہ بیگ کی دوسری صاحبزادی آمنہ فاطمہ آدرش ہیں جو ٹی وی اداکار آدرش کے نکاح میں ہیں اور پاکستان کے ایک معروف نجی ٹی وی چینل سے منسلک ہیں۔ عبید اللہ بیگ کی تیسری صاحبزادی آمنہ بیگ ہیں جو پاکستان سے شائع ہونے والے انگریزی روزنامہ “دی نیوز انٹرنیشنل“ سے منسلک ہیں۔
سندیپا دھر 2010ء میں، سندیپا دھر نے راج شری پروڈکشن کے ذریعے اپنی پہلی ہندی فلم اسی لائف میں اکشے اوبرائے کے ساتھ کام کا آغاز کیا۔ اس فلم میں اس کی کارکردگی کو سراہا گیا اور تین مشہور ترین اعزازات کے لئے نامزد ہوئی۔ ترن آدرش کے تبصرہ کے مطابق "سندیپا ڈھار مستقبل کی ایک کامیاب اداکارہ کے طور پر اپنا نام کما سکتی ہے۔ اس کے تاثرات بالکل حقیقی ہیں اور وہ بہت ہونہار اداکارہ ہے۔"
عبید الرحمٰن صدیقی عبید الرحمٰن صدیقی نے شہر غازیپور کے مشہور و معروف تعلیم یافتہ گھرانے میں آنکھ کھولی جس کا خاصا اثر ان کے ادبی اور تحقیقی سفر پر رہا. عبید الرحمن کی ابتدائی تعلیم مدرسہ دینیہ میں درجہ پنجم تک اور بعد ازاں درجہ ششم تک مدرسہ عظیمیہ میں ہوئی. اس کے بعد شہر کے مشہور و معروف تعلیمی ادارہ محمڈن اینگلو ہندوستانی انٹر کالج سے جونیر ہائی اسکول سے لیکر انٹرمیڈیٹ تک کی تعلیم مکمل کرنے کے بعد غازی پور کے پوسٹ گریجویٹ ڈگری کالج سے گریجویشن کی ڈگری حاصل کر کے 1984ء میں الہ آباد یونیورسٹی چلے گئے. وہاں ایل.ایل.بی اور ڈپلوما ان جرنلزم کی ڈگری حاصل کی اور پھر نجی طور پر ایم.اے.انگریزی علی گڑھ مسلم یونیورسٹی سے کیا، اور اس کے بعد دہلی کا رخ کیا. اس درمیان آئی.اے.ایس کا امتحان پاس کیا لیکن انٹرویو میں ناکامی کے سبب وطن غازی پور واپس آگئے. آدرش انٹر کالج میں عارضی لیکچرر بھی رہے لیکن دل نہیں لگا. کچھ سالوں بعد بھارت کے مشہور و معروف رسائل اور اخبارات میں مضامین لکھنے لگے اور یہ سلسلہ ہنوز جاری ہے.
میدھا پاٹکر میدھا پاٹکر (پیدائش: یکم دسمبر، 1954ء) ایک بھارتی سماجی کارکن ہیں جو مختلف سیاسی اور معاشی معاملات پر کام کررہی ہیں جو قبائل، دلت، کسان، مزدور اور خواتین کی جانب سے اٹھائے جا رہے ہیں جو ناانصافی کا شکار ہیں۔ وہ تین دہوں سے زیادہ عرصے پر محیط تین ریاستوں کی تحریک کی بانی ہیں: مدھیہ پردیش، مہاراشٹر اور گجرات -- نرمدا بچاؤ آندولن۔ یہ تحریک ان لوگوں کے مطالبوں کو آواز دے رہی ہے جو ڈیم منصوبوں سے بے گھر ہو گئے ہیں، اس طرح سے ترقی کے نظریے کو کھوکلا بتا رہی ہیں۔ متصلاً وہ بازتعمیری اور تعلیمی سرگرمیوں سے بھی جڑی ہیں۔ وہ نیشنل الانئنس آف پیپلز موومنٹز (این اے پی ایم) کے بانیوں میں سے ہیں، جو سینکڑوں ترقی پسند عوامی تنظیموں کا اتحاد ہے۔ وہ ڈیموں کے عالمی کمیشن (World Commission on Dams) کی کمیشنر بھی رہ چکی ہیں جو ماحولیاتی، سماجی، سیاسی اور معاشی امور اور عالمی سطح پر بڑے ڈیموں کی تعمیروترقی کے اثرات کا جائزہ لے چکا ہے اور متبادلات پر بحث کر چکا ہے۔ وہ این اے پی ایم کی قومی کوآرڈینیٹر اور پھر کنوینر بھی رہ چکی ہے، جبکہ اب وہ اس کی مشیر ہے۔ اسی این اے پی ایم کے پرچم تلے وہ مختلف ملکی جد و جہدوں میں حصہ لے چکی ہیں جو نابرابری، ماحولیاتی بگاڑ، بے گھر ہونا اور ترقی کے نام پر ناانصافی پر مرکوز تھے۔ وہ ذات پات، فرقہ پرستی اور ہر قسم کے امتیازات کے خلاف ہیں۔ وہ ان ٹیموں کا حصہ بنی جو قومی پالیسیوں کو شروع کرنے اور آگے بڑھانے، نیز قانون بنانے کوشاں تھے کہ زمین کا حصول، غیرمنظم شعبے کے مزدور، سڑک فروش، جھگی جھوپڑیوں کے قیام پزیر لوگ، جنگل کے آدی واسیوں کا تحفظ ہو سکے۔ این اے پی ایم نے کئی مفاد عامہ کے مقدمات دائر کر چکی ہیں، جن میں آدرش سوسائٹی، لواسا میگاسٹی، ہیرانندانی اور کئی بِلڈر شامل تھے۔ نرمدا بچاؤ آندولن اور گھر بچاؤ گھر بناؤ آندولن میدھا اور این اے پی ایم کے دیگر اتحادیوں کی شروع کردہ ہیں۔